Global Editions

اب سمندر میں چھپے خزانے تلاش کرنے والےروبوٹ بھی آگئے

سمندر ویسے تو بے شمار رازوں کا امین ہونے کے ساتھ ساتھ بیش قیمت خزانوں کا نگہبان بھی ہے۔ جستجو انسان کی سرشت ہے اور خزانوں کی تلاش اس جستجو کا نکتہ عروج۔ ماضی میں بھی سمندر میں چھپے خزانوں کی تلاش کی ہزاروں نہیں تو لاکھوں کوششیں ضرور ہوئی ہونگی اور ان میں سے ہو سکتا ہے کہ کئی کوششیں کامیاب بھی ہو گئی ہوں۔ ماضی میں سمندر میں چھپے خزانوں کی تلاش کے لئے ماہر غوطہ خوروں اور ملاحوں کا ہونا ضروری تھا۔ ترقی کے ساتھ ساتھ اس عمل کے لئے جدید سائنسی طریقے اختیار کئے گئے اور خزانوں کی تلاش کے لئے انسانوں کے ساتھ ساتھ روبوٹ بھی شامل ہو گئے ہیں۔ یہ امر اس بات کا غماز ہے کہ مستقبل میں کس طرح روبوٹ انسانوں کے ساتھ شابہ بشانہ مختلف اور پیچیدہ ماحول میں کام کر سکیں گے۔ سمندر میں خزانوں کی تلاش کے لئے تیار کئے گئے روبوٹ کا نام اوشن ون OceanOne رکھا گیا ہے اور اسے سٹینفورڈ یونیورسٹی نے تیار کیا ہے۔ اس روبوٹ کی مدد سے حال ہی میں کنگ لوئس چودہ لا لونے La Lune کا 350 سال پرانا سمندر برد ہونے والے خزانے کو تلاش کیا گیا ہے۔ اس خزانے کو شمالی فرانس کے علاقے ٹولن Toulon سے دریافت کیا گیا ہے۔ یہ خزانہ 1664 میں سمندر برد ہو گیا تھا۔ OceanOne روبوٹ کے دو ہاتھ، منہ اور ایک پائوں ہے جس کے ساتھ روبوٹ کو پانی میں آگے دھکیلنے والے پنکھے لگے ہیں۔ یہ روبوٹ مکمل طور پر واٹر پروف ہے اور روبوٹ کو پانی میں آگے دھکیلنے کے لئے پنکھے مکمل طور پر موٹرآئزڈ ہیں۔ اس روبوٹ کو سٹینفورڈ یونیورسٹی کے پروفیسر اسامہ خطیب Oussama Khatib نے ساتھیوں کی مدد سے تیار کیا ہے۔ اس روبوٹ کو ریموٹ کے ذریعے کنٹرول کیا جاتا ہے اور کنٹرول روم میں اس روبوٹ کا کنٹرولنگ یونٹ جوائے سٹکس کی مدد سے اس روبوٹ کو کنٹرول کرتا ہے۔ دوسری جانب یہ روبوٹ خودکار انداز میں بھی کام کر سکتا ہے اور اپنی راہ میں آنےوالی رکاوٹوں کو دور کر سکتا ہے۔ یہ روبوٹ گہرے پانیوں میں آسانی سے جا سکتا ہے اور حساس کیمروں کی مدد سے زیرسمندر مناظر کی فلم کشی اور منظر کشی کرنے کی صلاحیت رکھتا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ اس روبوٹ کو سمندر میں خزانے کی تلاش کے علاوہ دیگر مقاصد مثال کے طور پر سمندر میں موجود تیل کے کنوئوں کی مرمت، گہرے پانیوں میں موجود آنٹرنیٹ کیبل کی مرمت وغیرہ جیسے دیگر مقاصد کے لئے استعمال کیا جا سکتا ہے۔

تحریر: ول نائیٹ (Will Knight)

Read in English

Authors
Top