Global Editions

اب روبوٹس خریداری میں بھی آپکے مددگار

تصور کیجئے آپ خریداری کے لئے کسی ڈیپارٹمنٹل سٹور پر گئے ہیں اور مطلوبہ شے کی عدم دستیابی پر آپ یقینناً کوفت کا شکار ہونگے لیکن غور طلب بات یہ ہے کہ دکان میں موجود سامان کے مقررہ مقام پر نہ ہونے اور سیلز سٹاف کی غلط رہنمائی کے باعث دنیا بھر میں دکاندار مجموعی طور پر سالانہ اربوں ڈالر کا نقصان کر بیٹھتے ہیں۔ اب پریشان ہونے کی ضرورت نہیں کیونکہ اب خریداری میں ٹیلی (TALLY) نامی روبوٹ آپکا معاون ہو سکتا ہے اور اب یہ آپکو سٹور سے خالی ہاتھ واپس نہیں جانے دیگا۔ ٹیلی نامی روبوٹ کو سائمبی روبوٹکس (SIMBE ROBOTICS) نامی کمپنی نے تیار کیا ہے، یہ روبوٹ سٹور میں خودکار انداز میں کام کرتے ہوئے موجود اشیاء کا جائزہ لیتا ہے اور سٹور میں نصب الماریوں کے خانوں میں اشیاء کے کم یا نہ ہونے کی نشاندہی کرتاہے۔ سٹور میں دستیاب سٹاک کا جائزہ لینا کاروبار کے لئے نہایت ضروری ہے کیونکہ اگر سٹور میں اشیاء ضروریہ درست جگہ پر نہ ہوں، کم ہوں، مل نہ رہی ہوں یا اپنی جگہ پر نہ رکھے جانے کی صورت میں نقصان دکاندار کا ہی ہوتا ہے۔ ایک تجزیہ کار کمپنی IHL کے تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ ایک بڑے سٹور کو اپنے سٹاک کو صحیح طرح سے جانچنے اور اسے ترتیب دینے میں بہت وقت درکار ہوتا ہے اور یہ کام بعض اوقات ہفتوں پر محیط بھی ہو سکتا ہے۔سائمبی روبوٹکس (SIMBE ROBOTICS) کے چیف ایگزیکٹو براڈ بوگولیا (Brad Bogolea) نے بتایا کہ ان کی کمپنی کا بنایا گیاروبوٹ سٹور میں موجود سٹاک کا نہایت کم وقت میں جائزہ لے سکتا ہے انہوں نے مثال دیتے ہوئے کہا ٹیلی روبوٹ وال گرین جیسے سٹور کی الماریوں کے خانوں میں موجود سٹاک کا صرف ایک گھنٹے میں جائزہ لے سکتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ یہ روبوٹ کرائے پر دئیے جائیں گے انہیں ابھی بیچنے کا ارادہ نہیں ہے انہوں نے یہ بھی بتایا کہ تجرباتی بنیاد پر ایک روبوٹ بڑے ڈیپارٹمنٹل سٹور پر کام کر رہا ہے۔ انہوں نے ربورٹ کے کام کرنے کے طریقہ کار کے بارے میں بتایا کہ سٹور کے نقشے کو روبوٹ میں فیڈ کیا جاتا ہے، پھر سٹور میں مو جود الماریوں اور انکے خانوں میں موجود سامان کی فہرست روبوٹ میں فیڈ کر دی جاتی ہے، اس میں اضافی سٹاک کی فہرست بھی شامل کر دی جاتی ہے۔ پھر روبوٹ کو سٹور کی مانیٹرنگ کے لئے بھیجا جاتا ہے اوروہ سٹاک کا جائزہ لیتا رہتا ہے اور کسی بھی کمی بیشی کی صورت میں دکاندار کو آگاہ کر دیتاہے۔ ربورٹ ساز کمپنی کے چیف ایگزیکٹو مسٹر براڈ کا کہنا تھا کہ ہم خریداری کے نظام کو خودکار کرنے کے لئے کوشاںہیں اور ہمارے نزدیک اس فیلڈ میں کام کرنے کے وسیع مواقع موجود ہیں۔ کارنج میلن یونیورسٹی کے پروفیسرمینولا ویلوسو(Manuela Veloso) کا کہنا ہے کہ ٹیلی روبوٹ کی تیاری کا آئیڈیا شاطرانہ ہے تکنیکی اعتبار سے یہ ایک مشکل کام ہے لیکن اس سے سٹورز میں اشیاء کو درست انداز میں ترتیب دینے میں آسانی ضرور ہوگی۔

 

(Will Knight) تحریر : ول نائٹ

Read in English

Authors

*

Top